Author Topic: جامعہ بلوچستان کے لاپتہ طلباء کی عدم بازیابی کے خلاف دوبارہ احتجاجی دھرنا  (Read 116 times)

Offline AKBAR

  • Editorial board
  • Hero Member
  • *****
  • Posts: 4924
  • My Points +1/-1
  • Gender: Male
    • pak study

جامعہ بلوچستان کے لاپتہ طلباء کی عدم بازیابی کے خلاف دوبارہ احتجاجی دھرنا
 جامعہ بلوچستان کے لاپتہ طلباءسہیل بلوچ اور فصیح بلوچ کی عدم بازیابی کے خلاف طلباءتنظیموں نے بلوچستان یونیورسٹی کے احاطے میں دوبارہ احتجاجی دھرنا دینے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ یونیورسٹی انتظامیہ اورفورسز نے جامعہ بلوچستان کے احاطے میں دھرنا دینے سے روکا تو باہر سڑک پر دھرنا دیں گے ۔ اس بات کا اعلان طلباءتنظیموں پر مشتمل الائنس کے رہنماؤں طاہر شاہ، زبیر بلوچ اورعاطف رودینی نے بلوچستان یونیورسٹی کے باہر ہنگامی پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہی ۔
 طلباءرہنماؤں نے کہا کہ جامعہ بلوچستان کے لاپتہ طلباءسہیل بلوچ اور فصیح بلوچ کے مبینہ اغواءکیخلاف سات نومبر سے طلباءتنظیموںپر مشتمل الائنس نے احتجاجی تحریک کا آغاز کیا بعدازاں بلوچستان حکومت کی یقین دہانی پر جامعہ بلوچستان میں جاری احتجاجی دھرنے کو موخر کرنے کا اعلان کیا تاہم حکومتی دعوؤں اوریقین دہانیوں کے باوجود لاپتہ طلباءبازیاب نہیں ہوسکے ۔
 انہوں نے کہا کہ بدھ کوطلباءالائنس کے مشترکہ فیصلے کے تحت بلوچستان یونیورسٹی میں اسٹڈی سرکل منعقد کیا جانا تھا جب طلباءجامعہ بلوچستان پہنچے تو انہیں گیٹ پر روک کر اندر جانا کی اجازت نہیں دی گئی انہوںنے الزام عائد کیا کہ پولیس نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرکے طلباءکو اندر جانے سے روکا جس کی مذمت کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ صوبے کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ڈنڈا بردار پولیس کی بھاری نفری بلوچستان یونیورسٹی کے اندر اور قلم بردار طلباءگیٹ سے باہر کھڑے ہیں ۔
 انہوں نے کہا کہ سہیل بلوچ اور فصیح بلوچ کی عدم بازیابی کے خلاف طلباءتنظیمیں جمعہ28 جنوری سے دوبارہ بلوچستان یونیورسٹی کے احاطے میں داخلی دروازے کے سامنے احتجاجی دھرنا دیں گی اگر یونیورسٹی انتظامیہ اور پولیس نے جامعہ کے احاطے میں طلباءکو دھرنا دینے سے روکا تو باہر سڑک پر دھرنا دیا جائیگا ۔ انہوں نے کہا کہ آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان 28 جنوری کو کیا جائیگا۔ قبل ازیں طلباءنے جامعہ بلوچستان کے داخلی دروازے کے سامنے احتجاجی مظاہرہ بھی کیا ۔